اب پسینے سے اپنا موبائل ان لاک کرے

پسینے سے موبائل کو ان لاک کیا جا سکتا ہے

موبائل ان لاک

یارک کے البانے یونیورسٹی کے ماہرین نے اپنے ایک تحقیق میں یہ دعوئ کیا ہے۔  کہ انسانی جسم سے نکلنے والا پسینہ موبائل کو ان لاک کرنے میں استعمال ہو سکتا ہے۔ انگلیوں کے نشان اور چہرہ شناسی سے موبائل ان لاک کا طریقہ پرانا ہو گیا ہے۔ یہ نئی ٹیکنالوجی آئندہ چند برسوں میں متعارف کرادی جائیگی۔

البانے یونیورسٹی کے تحقیق کے بعد ماہرین اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ انسانی کھال سے نکلنے والے پسینے کے زرات کا نقش منفرد نوعیت کا ہوتا ہے۔ جو سمارٹ ڈیوائسز بشمول موبائل فونز اور سمارٹ واچز کو ان لاک کرنے کے کام آسکتا ہے۔ یہ ٹیکنالوجی ڈیوائس کو ہیکروں سے محفوظ رکھنے کا موثر طریقہ ثابت ہوگا۔ تحقیق سے منسلک سائنسدان ڈاکٹر جان ہیلمک کا کہنا ہے کہ وہ سمارٹ ڈوائسز کو ہیکروں سے بچانے کا ایک ایسا محفوظ طریقہ تیار کر رہے ہیں جو شناخت کی تصدیق کے سابقہ تمام طریقوں سے مکمل طور پر مختلف ہوگا۔

ڈوائس کو فول پروف بنانے کے لئے  پسینے کا استعمال کیا جائگا جو شناخت کا قابل بروسہ زریعہ بنے گا۔ متہققین کا کہنا ہے کہ ہر انسان کا پسینہ دوسرے سے مختلف ہوتا ہے۔ یہ پسینہ مختلف کیمیائی مادوں اور ذرات پر مشتمل ہوتا ہے اور یہ مادے ہر انسان میں ایک جیسے نہیں ہوتے۔ اس شناخت کا مقصد یہ ہے کہ موبائل کو زیادہ سے زیادہ فول فروف بنایا جا سکے۔ اس ٹکنالوجی کو استعمال کرنے سے پہلے ایک پروفائل تیار کی جائگی جو مخصوص عرصے کے لئے دن اور رات کے اوقات میں ڈیوائس کے مالک کے پسینے کو مستقل مانیٹر کرے گی تاکہ موبائل کے مالک کی شناخت محفوظ کر لی جائے۔

سائنسدان اس طریقے کو جلد از جلد لانچ کرنے کے لئے دن رات مھنت کر رہے ہیں تاکہ لوگوں کا ڈیٹا زیادہ سے زیادہ محفوظ رکھ سکے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *